منگل, 25 اگست 2015 11:16

جوبائیڈن کے بیانات پر لاؤروف کی تنقید

جوبائیڈن کے بیانات پر لاؤروف کی تنقید

روس کے وزیر خارجہ نے عراق کی تقسیم کے حوالے سے امریکہ کے نائـب صدر کے بیانات کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیا ہے۔

پریس ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق روس کے وزیرخارجہ سرگئی لاؤروف نے پیر کو ماسکو کے قریب نوجوانوں کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ روس ، امریکی نائب صدر کے اس موقف کو ہرگز تسلیم نہیں کرتا کہ عراق کو شیعہ، سنی اور کرد علاقوں میں تقسیم کر دینا چاہئے- سرگئی لاؤروف نے جو بائیڈن کے موقف کو ناقابل قبول قرار دیا اور کہا کہ یہ ایسا ہی ہے جیسے عراقی عوام سے کہا جائے کہ وہ اپنے ملک کا انتظام، کس طرح چلائیں۔ روسی وزیر خارجہ نے اسے سماجی خلفشار پھیلانے کی کوشش قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ جوبائیڈن کے نظریے کا تخریبی اور تباہ کن ہونا پوری طرح واضح ہے- سرگئی لاؤروف نے تاکید کے ساتھ کہا کہ ہمارا خیال ہے کہ شیعوں ، سنیوں اور کردوں کو خود یہ فیصلہ کرنا ہے کہ وہ ایک دوسرے کے ساتھ کس طرح زندگی بسر کرنا چاہتے ہیں- اس رپورٹ کے مطابق روسی وزیر خارجہ کا یہ بیان، امریکہ کے صدارتی انتخابات میں جو بائیڈن کے حصہ لینے کی خبریں منظر عام پر آنے کے بعد سامنے آیا ہے۔ جوبائیڈن نے دوہزار چھ میں نیویارک ٹائمز میں اپنے ایک مقالے میں عراق میں فیڈرل نظام حکومت قائم کرنے اور سنی اور شیعہ مسلمانوں کے لئے خود مختار علاقوں کی تشکیکل کا سازشی نظریہ پیش کیا تھا-
az25082015

Add comment


Security code
Refresh