جمعرات, 06 اگست 2015 14:44

یمن پر سعودی لڑاکا طیاروں کے وحشیانہ حملے جاری

یمن پر سعودی لڑاکا طیاروں کے وحشیانہ حملے جاری

یمن کے مختلف علاقوں پر سعودی عرب کے لڑاکا طیاروں کی وحشیانہ بمباری مسلسل جاری ہے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے لڑاکا طیاروں نے جمعرات کے دن جنوبی یمن میں واقع صوبہ ابین کے صدر مقام زنجبار پر بمباری کی۔ سعودی عرب کے لڑاکا طیاروں نے یمن کے صعدہ ، حجہ اور الجوف صوبوں کے مختلف علاقوں کو اپنے حملوں کا نشانہ بنایا۔ سعودی عرب کے لڑاکا طیاروں نے صوبہ الحجہ میں واقع المجبر، الجمارک اور وادی بن عبداللہ پر آٹھ مرتبہ بمباری کی۔ سعودی عرب کے لڑاکا طیاروں نے بدھ کے دن بھی یمن کے پانچ صوبوں پر بمباری کی تھی۔ اس بمباری میں کم از کم بیس یمنی شہری شہید ہو گئے تھے۔ دوسری جانب یمن کے فوجیوں اور عوامی رضا کار فورس کے اہلکاروں نے مارب شہر کے قریب واقع پہاڑوں کو دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرا لیا ہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے اس شہر کے داخلی راستوں تک پیش قدمی بھی کی ہے۔ یمن کے المسیرہ ٹی وی نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران جنوبی یمن میں واقع لحج اور عدن میں بارودی سرنگوں کے پھٹنے سے اکتیس دہشت گرد اور سعودی عرب کے پٹھو ہلاک ہو چکے ہیں۔ یمن کی وزارت دفاع نے بھی کہا ہے کہ یمن کے فوجیوں اور عوامی رضاکار فورس کے اہلکاروں نے سعودی عرب کے جنوبی علاقے میں واقع نجران میں فوجی چھاؤنی المخروق پر حملہ اور الشرفہ چھاؤنی پر گولہ باری کر کے سعودی عرب کے متعدد فوجیوں کو ہلاک کر دیا ہے۔ یمن کے فوجیوں نے بدھ اور جمعرات کی درمیان رات میں جیزان میں سعودی عرب کی فوجی چھاؤنی پر حملہ کر کے سعودی عرب کے ایک فوجی کو ہلاک کر دیا۔ ادھر جنوبی یمن میں واقع صوبہ لحج کے العند ایئر بیس کے ارد گرد جھڑپیں ہوئی ہیں۔ عراق کی نہرین ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق العند ایئربیس پر حملے میں اردن، متحدہ عرب امارات اور سینیگال کے فوجیوں نے حصہ لیا لیکن یمن کے فوجیوں اور عوامی رضا کار فورس کے اہلکاروں نے ان کا یہ حملہ ناکام بنا دیا۔ العند ایئر بیس کے ارد گرد ہونے والی جھڑپوں میں دسیوں دہشت گرد ہلاک ہوئے ہیں۔ یمن سے موصول ہونے والی ایک اور رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات نے ایک بحری جہاز میں انسانی دوستی پر مبنی امداد کے نام پر جنگی ساز و سامان عدن بھیجا ہے۔ یمن کے ذرائع کا کہنا ہے کہ چند دن قبل متحدہ عرب امارات کا جو بحری جہاز عدن پہنچا تھا اس میں یمن کے مفرور سابق صدر عبدربہ منصور ہادی سے وابستہ مسلح افراد کے لئے فوجی ساز و سامن لدا ہوا تھا۔ کہا جا رہا ہے کہ یمن کے جنوبی علاقے میں واقع صوبے عدن میں سعودی عرب اور اس کے پٹھوؤں کا مشن متحدہ عرب امارات کو سونپ دیا گیا ہے اور یمن کی عوامی تحریک انصاراللہ اب تک متحدہ عرب امارات کے سیکڑوں فوجیوں کو گرفتار کر چکی ہے۔

Add comment


Security code
Refresh